اعلی بلڈ پریشر کے ساتھ منسلک اعتدال پسند شراب کی کھپت: مطالعہ – بزنس سٹینڈرڈ
اعلی بلڈ پریشر کے ساتھ منسلک اعتدال پسند شراب کی کھپت: مطالعہ – بزنس سٹینڈرڈ
March 8, 2019
ایودھیا عنوان تنازعہ: سپریم کورٹ کی طرف سے مقرر کردہ مباحثے کون ہیں؟
ایودھیا عنوان تنازعہ: سپریم کورٹ کی طرف سے مقرر کردہ مباحثے کون ہیں؟
March 8, 2019
'تمام ملزمان کے مقابلے میں زیادہ جھوٹ بولتے ہیں': راہول گاندھی نے اوڈیشا میں مودی پر تازہ نمواہ آگئی

کانگریس کے صدر راہول گاندھی نے جمعہ کو وزیراعلی نریندر مودی پر ایک نیا نمونہ توڑ دیا ہے کہ الزام لگایا ہے کہ اس نے ملک کو کسی دوسرے شخص سے بھی زیادہ غلط قرار دیا ہے جس نے دفتر منعقد کیا ہے. گاندھی نے متعدد مسائل پر وزیراعظم مودی کو نشانہ بنایا، رفایل کے معاہدے، بے روزگاری، فارم تکلیف اور قانون سازی میں خواتین کی نمائندگی سمیت.

“بھارت میں بہت سے وزیر اعظم موجود ہیں. لیکن گاندھی کی حجم کہ یہ وزیراعظم بولتے تمام سابقہ ​​وزیر اعظم کی طرف سے بولی مشترکہ جھوٹ سے زیادہ ہے، “گاندھی نے اوڈشا کے کورپاٹ میں خواتین کے ساتھ بین الاقوامی خواتین کے دن کے ساتھ بات چیت کے دوران کہا.

گاندھی نے نریندر مودی حکومت کی پالیسیوں کو بے روزگاری بڑھانے اور خواتین کے خلاف بڑھتے ہوئے جرم کے الزام میں الزام لگایا. انہوں نے کہا کہ “بھارت میں نوکریاں نہیں بنائی جا رہی ہیں. بے روزگاری تشدد، نفرت اور شراب کی طرف بڑھتی ہے … جب تک کہ آپ سچ کا سامنا نہیں کرتے، آپ کو مسائل کو حل نہیں کرسکتے. یہ وزیر اعظم سچائی کا سامنا نہیں کرنا چاہتا. ”

کانگریس کے صدر نے وعدہ کیا ہے کہ آئندہ لوک سبھا کے انتخابات میں پارٹی کو اقتدار میں ووٹ دیا جائے گا، یہ قانون سازی میں خواتین کی بہتر نمائندگی کے لۓ “خواتین کی ریزرویشن بل منظور کرنے کی کوشش کرے گی.”

گاندھی نے کہا کہ “ہندوستانی ایرونٹکس لمیٹڈ نے کرواپتٹ میں ایک پلانٹ ہے … وزیر اعظم نے ہال سے رفایل کے معاہدے پر دستخط کیے اور اسے انیل امبانی کو دیا جس نے 30،000 کروڑ روپے کا معاہدہ کیا. یہ رقم ہال سے تھا. ”

گاندھی نے پبلک اجلاسوں میں رفایل کے معاملات کا معاملہ اٹھایا ہے کہ وہ وزیراعظم مودی کو ہدف بنانے کے لئے 2016 میں بھارت اور فرانس کے درمیان دستخط 59،000 کروڑ رو.

کانگریس کے صدر اوڈیشا کے وزیر اعلی نوین پٹنایک نے بھی کہا کہ بی جے پی حکومت نے ریاست میں خواتین کی حفاظت اور تحفظ کو یقینی بنانے میں ناکام رہے. “ہر روز 12 عورتوں کو اوڈشا میں رپوٹ کیا گیا ہے اور صرف ایک سال میں صرف سات انصاف ملے … حال ہی میں چار چار سالوں میں صورتحال خراب ہوگئی ہے.”

انہوں نے کہا کہ اگر کانگریس کو اوڈشا میں اقتدار میں منتخب کیا جاتا ہے تو یہ تعلیم اور صحت کی ترجیحی شعبوں کو زیادہ بجٹ مختص کرنے کے لۓ کرے گا.

پہلی اشاعت: مارچ 08، 201 9 14:02 IST

Comments are closed.